میرا کشمیر لہو لہو ہے – By Naheed Akhtar

میرا کشمیر لہو لہو ہے - By Naheed Akhtar

4
By Naheed Akhtar – میرا کشمیر لہو لہو ہے
By Naheed Akhtar – میرا کشمیر لہو لہو ہے

Naheed Akhtar writes poetry for Solidarity to Jammu Kashmir

 Mera Kashmir Lahu Lahu Hai – By Naheed Akhtar

 

 

میرا کشمیر لہو لہو ہے
By Naheed Akhtar – میرا کشمیر لہو لہو ہے

 

Read More: AZAADI-BY NAHEED AKHTAR

 

میرا کشمیر لہو لہو ہے
میرا کشمیر لہو لہو ہے
یہاں تو ہر طرف ہیں فوجی
یہاں تو بارود کی ہی بو ہے
میرا کشمیر لہو لہو ہے
میرا کشمیر لہو لہو ہے
تمھیں ہی رسوائی ہوگی آخر
تمھیں ہی پسپائ ہوگی آخر
میرا تو ہر شہید سرخورو ہے
میرا تو ہر شہید سرخورو ہے
میرے وطن کے یہ پیارے بیٹے
میرے وطن کے یہ نیارے بیٹے
وطن کی مٹی پے جاں نچھاور
وطن کی مٹی ہے ان کی مادر
نا یہ ڈریں ہیں نا یہ ڈریں گے
وطن کی خاطر یہ کٹ مریں گے
ہر اک جرم کا حساب ہوگا
اپنی آزادی کا یہ باب ہوگا
تمھیں وطن سے نکالنا ہے
پھر وطن کو سنوارنا ہے
بچہ بچہ کہے گا آخر
میرا کشمیر سر خورو ہے
ابھی میرا کشمیر لہو لہو ہے
ابھی میرا کشمیر لہو لہو ہے۔

4 COMMENTS

  1. Une longue barbe blanche, des cheveux blancs sur lesquels il avait pose un beret basque, un complet de velours marron a cotes
    use, des sabots; l’air bougon, une figure assez rebarbative qui s’eclaira cependant des qu’il eut apercu M.
    adipex online Mais,
    j’y pense, nous pouvons nous procurer cette jubilation; je vais
    d’abord placer, dans mon ebauche, le canot bien en vue, j’y dessinerai ensuite
    l’Indien maniant l’aviron, lorsque nous serons parvenus a nous rapprocher de ce pecheur.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here